Home / انٹرنیشنل / کویت میں بھی فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ

کویت میں بھی فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ

کویت سٹی : فرانسیسی صدر کے اسلام مخالف بیان اورگستاخانہ کارٹونوں کی اشاعت کے خلاف کویت میں بھی فرانسیسی اشیاء کے بائیکاٹ کی مہم زوروں پر ہے۔

کویت میں فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ اور ترک مال کی حوصلہ افزائی کے نام سے مہم کا آغاز کردیا گیا ہے جو زور و شور سے جاری ہے، کویت کے سماجیکارکنان نے ملک میں عام استعمال کی جانے والی فرانسیسی مصنوعات کی تصاویر اور ان کی نعم البدل ترک مصنوعات کی تصاویر شائع کردیں۔

کویت کے پرچون فروشوں نے بھی فرانسیسی مصنوعات کا اجتماعی بائیکاٹ کردیا ہے اور انہوں نے اپنی دکانوں اور سپر اسٹورز سے فرانسیسی اشیاء ہٹا دی ہیں۔

اس حوالے سے کویت کی غیر سرکاری صارفین کوآپریٹو سوسائٹیز کی یونین نے جمعہ کو فرانسیسی اشیاء کے بائیکاٹ کے لیے ایک باضابطہ سرکلر جاری کیا تھا اس یونین میں کویت کی 70 سے زیادہ تنظیمیں شامل ہیں۔

کویت کے شہریوں نے سوشل میڈیا پر فرانسیسی مصنوعات کی بائیکاٹ مہم کے لئے “فرانسیسی مصنوعات کو ترک مصنوعات سے تبدیل کرو” کا ہیش ٹیگ لگایا ہے۔

اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر صارفین نے فرانسیسی صدر کے بیان پر اپنے غم و غصے کا اظہار کیا جس میں بتایا گیا ہے کہ ملک کی معروف مارکیٹوں اور دوکانوں نے فرانسیسی مال کا بائیکاٹ کردیا ہے۔

واضح رہے کہ کویت کے 70 سے زائد پرچون فروش اراکین کی حامل ‘صارف کوآپریٹو یونین’نے 23 اکتوبر سے اپنے شیلفوں سے تمام فرانسیسی مصنوعات کو ہٹانے کا اعلان کیا تھا۔

کویت کے وزیر خارجہ احمد ناصر المحمد الصباح نے ملک میں فرانس کی سفیر این کلئیر لیجنڈر کو متنبہ کیا تھا کہ فرانس کا اسلام مخالف بیانات کو روکنا ضروری ہے، صباح نے مزید کہا کہ کویت اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑنے کی پالیسیوں کو مسترد کرتا ہے۔

اس سے قبل  ترک صدر رجب طیب اردوان نے فرانسیسی ہم منصب کو ایک بار پھر دماغی علاج کا مشورہ دیتے ہوئے شہریوں سے اپیل کی تھی کہ وہ فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ کریں۔

ترک صدر نے کہا کہ یورپی رہنماؤں کو یورپ میں نفرت کا پھیلاؤ روکنے کے لیے فرانسیسی صدر کی پالیسیوں کو روکنا چاہیے اور انہیں سمجھانے کی کوشش کرنی چاہیے۔

About Rana Usman

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *