Home / پاکستان / لاہور کی سیشن عدالت نے لیگی رہنما رانا ثناء اللہ کو گھر کا کھانا فراہم کرنے سے متعلق درخواست پر فیصلہ سنا دیا

لاہور کی سیشن عدالت نے لیگی رہنما رانا ثناء اللہ کو گھر کا کھانا فراہم کرنے سے متعلق درخواست پر فیصلہ سنا دیا

لاہور: لاہور کی سیشن عدالت نے مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناء اللہ کے لیے گھر سے کھانا لانے سے متعلق درخواست کا فیصلہ سنا دیا۔ تفصیلات کے مطابق سیشن عدالت نے سابق وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کو جیلمیں گھر کا کھانا دینے کی درخواست پر جیل سپرنٹنڈنٹ کو میڈیکل بورڈ کی ہدایات کو مدنظر رکھتے ہوئے قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا

۔سیشن جج لاہور قیصر نذیر بٹ نے رانا ثناء اللہ کی درخواست پر سماعت کی۔ سابق صوبائی وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کے وکلا نے موقف اختیار کیا تھا کہ رانا ثناءاللہ دل کے مریض ہیں لہٰذا ان کو جیل میں گھر کا پرہیزی کھانا دیا جائے۔ دوران سماعت عدالتی حکم پر ایم ایس انسٹیوٹ آف کارڈیالوجی نے بھی اپنی رپورٹ عدالت میں جمع کروائی جس کے بعد عدالت رانا ثناء اللہ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

تاہم کچھ دیر کے بعد سیشن عدالت نے رانا ثنااللہ کی جانب سے گھر کا کھانا فراہم کرنے کی درخواست نمٹاتے ہوئے جیل سپرنٹنڈنٹ کو میڈیکل رپورٹ کی روشنی میں فیصلہ کرنے کی ہدایت کر دی۔ یاد رہے کہ یکم جولائی کو مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناءاللہ کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔

ترجمان اے این ایف ریاض سومرو نے رانا ثنا ء اللہ کی گاڑی سے منشیات برآمد ہونے کا دعویٰ کیا تھا۔اے این ایف کے ترجمان ریاض سومرو نے رانا ثنا اللہ خان گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کی گاڑی سے منشیات کی بھاری مقدار برآمد ہوئی اور ان کے خلاف نارکوٹکس ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔رانا ثناءاللہ کو اے این ایف نے موٹروے پر ہی حراست میں لے لیا تھا۔ خیال رہے کہمنشیات برآمدگی سے متعلق کیس میں گرفتار رانا ثناء اللہ کے خلاف مزید انکوائریاں کھولنے کا فیصلہ بھی کیا گیا تھا جس میں جعلی مقابلے اور تین قتل کیسز بھی شامل ہیں۔

About admin

Check Also

Journalist Imran Riaz Khan arrested from Islamabad Toll Plaza

صحافی عمران ریاض خان اسلام آباد ٹول پلازہ سے گرفتار

سینئر صحافی عمران ریاض خان کو اسلام آباد ٹول پلازہ سے گرفتار کرلیا گیا۔ اے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *