Home / پاکستان / طلبہ مارچ کے شرکا کے خلاف ایف آئی آر پر پی پی، ن لیگ کا ردِ عمل

طلبہ مارچ کے شرکا کے خلاف ایف آئی آر پر پی پی، ن لیگ کا ردِ عمل

لاہور: طلبہ مارچ کے منتظمین اور شرکا کے خلاف لاہور پولیس کی جانب سے ایف آئی آر پر مسلم لیگ ن اور پاکستان پیپلز پارٹی نے ردِ عمل دیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ یہ ایف آئی آر واپس لی جائے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان ن لیگ مریم اورنگ زیب نے وزیر اعظم عمران خان کے طلبہ تنظیموں سے متعلق ٹویٹ پر بیان دیتے ہوئے کہا کہ طلبہ اور اساتذہ کے خلاف ایف آئی آر واپس لینے کا حکم دیا جائے، گرفتار افراد رہا کیے جائیں، طلبہ اور اساتذہ کے خلاف کارروائیاں بند کی جائیں۔

مریم اورنگ زیب نے کہا کہ طلبہ اور اساتذہ کا اظہار رائے کا حق سلب کرنا آمرانہ رویہ ہے، حکومتی ٹیم ہر اختلافی آواز بند کر رہی ہے، وزیر اعظم کے ٹویٹر اور حکومتی عمل میں تضاد پایا جاتا ہے، پر امن طلبہ اور اساتذہ پر جھوٹی ایف آئی آر درج کرنے والوں کو شرم آنی چاہیے۔

دوسری طرف پی پی چیئرمین بلاول بھٹو نے طلبہ مارچ کے منتظمین کے خلاف ایف آئی آر کی مذمت کی ہے، انھوں نے کہا کہ پر امن مارچ کے طلبہ کے خلاف مقدمے کا اندراج ریاستی جبر ہے، حکومت فوری طور پر مارچ منتظمین پر درج ایف آئی آر واپس لے، ترقی پسند طلبہ کے مارچ سے رجعت پسند قوتیں بوکھلا گئی ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز لاہور میں مال روڈ پر طلبہ نے یک جہتی مارچ کیا تھا، جس کے دوران عالمگیر وزیر نے اشتعال انگیز تقریر کی تھی، جس کے بعد طلبہ کو اکسانے کے الزام میں عالمگیر وزیر کو گرفتار کیا گیا، اور عالمگیر وزیر سمیت 300 طلبہ کے خلاف تھانہ سول لائنز میں مقدمہ درج کیا گیا۔

About Sehrish Ameen

Check Also

آصف زرداری کی رہائی پر پیپلزپارٹی کاجشن،مٹھائی تقسیم

ملتان: پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین وسابق صدر آصف علی زرداری کی رہائی پر پیپلزپارٹی شعبہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *